Monthly Archives: October, 2010

Ghaus-e-Azam’s quote # 41


بندہ جتنا بھی اللہ کے سامنے ذلّت اختیار کرے گا وہ اُسی قدر اُس کو عزت بخشے گا اور جس قدر بھی جھکے گا وہ اسی قدر اس کو رفعت عطا کرے گا۔ وہی عزت دینے والا ہے۔ وہی ذلّت دینے والا ہے۔ وہی بلند کرنے والا اور وہی پست کرنے والا ہے۔ وہی توفیق دینے والا اور وہی آسانی پیدا کرنے والا ہے۔ اگر اُس کا فضل نہ ہو تو ہم اُس کو ہر گز پہچان نہ سکیں۔

Ghaus-e-Azam’s quote # 40


اگر تم چاہتے ہو کہ متّقی، متوکل اور وثوق رکھنے والے بنو تو صبر کو ضروری سمجھ لو کہ صبر ہر خوبی کی بنیاد ہے۔

Mehfil-e-Milaad (24-04-2005) – Ugoki, Sialkot


Ghaus-e-Azam’s quote # 39


حلال غذا کھانے کی سعی کر کہ وہ تیرے قلب کو منوّر کر دے گی اور دل کو اس کی تاریکیوں سے باہر لے آئے گی۔

Ghaus-e-Azam’s quote # 38


اقوال و افعال کا مغز اخلاص ہے۔ جب کوئی اس سے عاری ہوتا ہے تو بِلا مغز چھلکا رہ جاتا ہے اور چھلکا آگ سے سوا کسی اور مصرف کا نہیں۔

Ghaus-e-Azam’s quote # 37


علم حیات ہے اور جہالت موت ہے۔ جو شخص عالم اور اپنے علم پر عامل اور عمل میں مخلص اور دوسروں کو تعلیم دینے میں صابر ہو وہ اپنے پروردگار سے جا ملتا ہے۔ اس کے لیے موت نہیں کیوں کہ جب علم و عمل اور اخلاق کی بہ دولت نفس سے آزاد ہو گیا تو وہ اپنے پروردگار سے جا ملا۔

Ghaus-e-Azam’s quote # 36


یہ دنیا بازار ہے۔ ذرا دیر بعد یہ بازار بالکل خالی ہو جائے گا۔ رات ہو جائے گی تو سارے بازار والے چلے جائیں گا۔ کوشش کرو کہ تم اس بازار میں خرید و فروخت نہ کرو۔ خریدنا ہو تو ایسی چیز خریدو جو کل بازارِ آخرت میں تمہارے لیے فائدہ مند ہوں۔

URS of Hazrat Sakiy-e-Kamil Syed Muhammad Afzaal Ahmad Hussain Gillani (RA) (1926-1998)


This slideshow requires JavaScript.

Ghaus-e-Azam’s quote # 35


اللہ والوں کا شغل سخاوت اور مخلوق کی راحت کا سامان کرنا ہے وہ لوٹنے والے ہیں اور خوب لٹانے والے ہیں۔ حق تعالیٰ اور اس کی رحمت کو لوٹتے ہیں اور فقراء و مساکین پر جو تنگی میں مبتلا ہیں، لٹا دیتے ہیں۔ جو قرض دار قرض ادا کرنے سے عاجز ہیں ان کا قرض ادا کرتے ہیں۔ بادشاہ وہی ہیں نہ کہ بادشاہانِ دنیا۔ بادشاہِ دنیا لوٹتے ہیں لٹاتے نہیں۔

Mehfil-e-Milaad (16-11-2006) at Aroop