Monthly Archives: March, 2011

Hazrat Ali’s quote # 17


تخلیقِ آدم

پھر خُدا نے فرشتوں سے چاہا کہ وہ اس کی امانت کا حق ادا کریں۔ اس سے انہیں اپنے عہد و وصیت کی طرف متوجہ کیا کہ آدم کو سجدہ کریں اور اس کی عظمت و بزرگی کے سامنے سرِ نیاز جھکا دیں۔

سب نے سجدے میں سر جھکا دیے سوا ابلیس کے جسے آدم کو سجدہ کرتے غیرت دامن گیر ہوئی۔ اس پر شقاوت طاری ہو گئی۔ اپنے آگ سے پیدا ہونے کا خیال کر کے اس نے غُرور کیا اور مٹی کے بنے ہوئے آدم کو حقیر و کم مایا جانا۔ اللہ نے اس کو مہلت عطا فرمائی کہ وہ غضبِ الہٰی کا مستحق ہو جائے، بد بختی پورے طور پر تمام ہو جائے اور وعدہ پورا ہو کر رہے۔ چنانچہ خدا نے فرمایا کہ تجھے وقتِ معلوم تک کے لیے مہلت دی جاتی ہے۔

پھر خدا نے آدم کو ایک ایسے مکان میں رکھا جس میں زندگی کی ہر آسائش مہیا تھی۔ یہاں وہ بڑی عافیت و امن سے تھا۔ خدا نے اس کو شیطان اور اس کی دشمنی سے ہوشیار اور چوکنا رہنے کی تاکید بھی کی لیکن آخر کار شیطان نے آدم کو دھوکا دے ہی دیا۔

پھر خدائے تعالیٰ نے آدم کی توبہ قبول کی اور اپنے کلمہ رحمت سے نوازا۔ اس سے جنت میں پھر بلا لینے کا وعدہ کیا اور آخر اسے دار البلاء میں اتارا جو توالد و تناسُل کی دنیا ہے۔

Advertisements

Hazrat Ali’s quote # 16


تخلیقِ آدم

جب خُداوندِ اعلیٰ آسمان و زمین، آفتاب و ماہتاب اور ستاروں کو پیدا کر چکا تو اس نے سنگلاخ و ہموار، شور اور قابلِ کاشت زمین سے ذراتِ خاکی کو اکٹھا کیا، اس کو پانی میں لت کیا کہ وہ خالص اور پاکیزہ ہو جائے۔ پھر اسے تری میں گوندھا یہاں تک کہ زمین کے عناصر ایک دوسرے میں پیوست ہو گئے۔

اس سے خُدا نے ایک صورت خلق کی جس میں کچھ ٹیڑھی ہڈیاں، اعضا، جوڑ اور پٹھے تھے۔ اسے ایک خاص مدت اور مخصوص وقت تک اسی طرح رکھا رہنے دیا حتیّٰ کہ وہ سوکھ کر خشک ہو گئی اور سخت ہو کر کھناکے کی آواز دینے کے قابل ہو گئی۔

پھر خدا نے اس میں اپنی روح پھونک دی۔ اب ایک ایسا انسان پیدا ہو گیا جو ذہین ہے اور ذہن سے کام لیتا ہے، جو صاحبِ فکر ہے اور فکر کو کام میں لاتا ہے، جو صاحبِ اعضا و جوارِح ہے اور ان سے خدمت لیتا ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 15


نعت

اے زمینوں کو بچھانے والے، آسمانوں کو بلندیوں پر روکنے والے، خوش نصیب و بد نصیب دلوں کو ان کی فطرتوں پر پیدا کرنے والے۔ اپنی بہترین نعمتیں اور روز افزوں درود اس بندے اور برگزیدہ رسول محمد ﷺ پر نازل فرما جو خاتمِ وحی و رسالت ہے اور مشکلات کے راستوں کا کھولنے والا ہے، جس نے حق کو حق سے آشکارا کیا، باطل کے لشکروں کو دھکیل دیا، گمراہی اور ضلالت کو ناپید کیا۔

وہ تیرے اسرار و رموز کے امین اور قیامت کے دن تیری جانب سے شاہد اور گواہ ہوں گے۔ وہ سچائی کے ساتھ تیرے بندوں کی طرف بھیجے ہوئے رسول ہیں۔

Hazrat Ali’s quote # 14


نعت

 

میں گواہی دیتا ہوں کہ محمد ﷺ اس کے بندے اور رسول ہیں جنہیں خدا نے اس وقت بھیجا جب ہدایت کے نشان پرانے ہو چکے تھے اور دین کے راست مٹ چکے تھے۔ انہوں نے کھلم کھلا حق کی دعوت دی، دنیا کو نصحیت کی، ہدایت کی طرف راہبری کی، سیدھے راستے پر چلنے کا حکم دیا۔

Hazrat Ali’s quote # 13


قرآن

 

قرآن کا ظاہر دل فریب ہے اور باطن عمیق ہے، نہ اس کے عجائبات کبھی انتہا پر پہنچیں گے اور نہ اس کے غرائب کبھی ختم ہوں گے۔ تاریکیاں اگر دور ہو سکتی ہیں تو صرف اسی سے۔

Hazrat Ali’s quote # 12


قرآن

قرآن ایک ایسا ناصح ہے جو کبھی خیانت کا مرتکب نہیں ہوا، ایسا راہنما ہے جو کبھی گمراہ نہیں کرتا، وہ ایک ایسا سخن گو ہے جو کبھی جھوٹ نہیں بولتا۔ جو اس کا ہم نشیں بنا اس کی ہدایت اور رستگاری میں اضافہ ہوا یا اس کی بے بصیرتی اور گمراہی کم ہو گئی۔ جان لو کہ علمِ قرآن کے بعد کسی کے لیے کسی طرح کی محتاجی نہیں اور واقفیت سے پہلے کسی کے لیے قرآن سے استغنا ممکن نہیں۔ لہٰذا تم اسی سے اپنے امراض کا مداوا چاہو اور اسی کے ذریعہ ہر دشمن پر نصرت کے طالب ہو۔

قرآن نے قیامت کے دن جس کسی کی شفاعت کی، اس کی شفاعت ضرور قبول ہو گی اور جس کو برا قرار دیا وہ نقصان سے نہ بچ سکے گا۔

پس تم اس کے پیرو اور کاشتکار بن جاؤ، اپنے رب تک پہنچنے کے لیے اس کو راہبر بناؤ۔ اپنے نفوس کے لیے اس سے نصیحت حاصل کرو، اس کے خلاف اپنی رائے کو غلط اور مہمل سمجھو اور اس کے مقابلے میں اپنی خواہشات کو خیانت کار قرار دو۔

Hazrat Ali’s quote # 11


قرآن

 

مکمل زُہد قرآن کے دو لفظوں میں ہے۔ جو ہاتھ سے نکل جائے اس کا غم نہ کریں اور جو ملے اس پر خوش نہ ہوں۔ گویا جس نے گئی ہوئی چیز پر حسرت اور ملی ہوئی شے پر اظہارِ مسرت نہ کیا، اُس نے زُہد کے اوّل و آخر کو پا لیا۔

قرآن حکم بھی دیتا ہے، منع بھی کرتا ہے، خاموش بھی ہے، گویا بھی ہے۔ قرآن دنیا پر خدا کی حجّت ہے جس کے لیے اس نے عہد لے لیا ہے اور دلوں کو اس کا پابند بنایا ہے۔ اس کے نور کو تمام اور اس کے دین کو کامل کیا ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 10


قرآن

 

قرآن میں تمہارے اگلوں کی خبریں، پچھلوں کی باتیں اور تمھارے درمیانی احکام ہیں۔

Hazrat Ali’s quote # 9


خدا کی معرفت

 

نہ میں نے کبھی جھوٹ بولا، نہ مجھ سے جھوٹ بلوایا جا سکا، نہ کبھی گمراہ ہوا، نہ مجھے گمراہ کرایا گیا۔

خدا ہمیشہ سے موجود ہے، حادث و نوپید نہیں، وہ ایک ایسا موجود ہے جس کی ہستی عدم و نیستی کے بعد نہیں۔ وہ ہر چیز کے ساتھ ہے لیکن بطورِ ہمسر نہیں، ہر چیز سے الگ ہے۔ لیکن اس سے کنارہِ کش نہیں، ہر چیز کا فاعل ہے لیکن اس کا فعل حرکات و آلات کا نتیجہ نہیں۔

Hazrat Ali’s quote # 8


خدا کی معرفت

میں نے حق میں کبھی شک نہیں کیا، جب سے اسے دیکھا ہے۔