Monthly Archives: April, 2011

Hazrat Ali’s quote # 46


فرائض

 

لوگ کوئی چیز بھی پانے کے لیے دین کو ہاتھ سے دے دیتے ہیں کہ دنیا ٹھیک ہو جائے تو خدا ان کے لیے اس سے زیادہ مضرّت کا دروازہ کھول دیتا ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 45


فرائض

 

خدا نے کچھ فرائض تم پر واجب کیے ہیں، انہیں ضائع نہ کرنا۔ کچھ حدیں مقرر کی ہیں، ان سے آگے نہ بڑھنا۔ اس نے کچھ چیزوں سے روکا ہے، تو انہیں مہمل نہ سمجھنا۔ کچھ چیزوں کے بارے میں سکوت ہے اور یہ سکوت بھول چوک سے نہیں (بلکہ مصلحت کی وجہ سے ہے) لہٰذا انھیں معلوم کرنے کی تکلیف نہ کرنا۔

Hazrat Ali’s quote # 44


فرائض

 

دلوں کا ایک مثبت رحجان ہوتا ہے، ایک منفی۔ جب دل جھکے تو اسے نوافل پر لگا دو اور جب کھنچے تو فرائض پر اکتفا کرو۔ کیونکہ عبادت میں حضورِ قلب شرط ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 43


فرائض

 

جب نوافل سے فرائض پر مخالف اثر پڑے تو انہیں چھوڑ دو۔

Hazrat Ali’s quote # 42


فرائض

جب فرائض کو نقصان پہنچے تو نوافل سے رضائے الہٰی نہیں ملتی (پہلے واجب پھر سنت)

Hazrat Ali’s quote # 41


کفر و شرک

ریا کاری خواہ کتنی ہی خفیف ہو ایک طرح کا شرک ہے۔ نفس پرست کے ساتھ نشست و برخاست ایمان کو فراموش اور شیطان کو حاضر کر دیتی ہے۔ کذب و دروغ سے کنارہ کش رہو کیونکہ جھوٹ خود ایمان سے کنارہ کش ہے۔ صادق القول نجات و کرامات کے دہانے پر اور دروغ گو ذلت و خواری کے کنارے کھڑا ہوا ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 40


کفر و شرک

عورت کی شرم کفر اور مرد کی شرم ایمان ہے۔

Hazrat Ali’s quote # 39


کفر و شرک

کُفر کے چار رکن ہیں۔ کرید، لڑائی، حق سے رو گردانی، افتراق اور دشمنی۔

جو شخص بے کار کی چھان بین اور کرید کرتا ہے وہ حق کی طرف نہیں پلٹتا۔ جو بے علمی کی وجہ سے زیادہ لڑتا ہے وہ راہِ راست دیکھنے سے ہمیشہ عاجز رہتا ہے۔ جو حق سے پھر جاتا ہے اس کے نزدیک اچھائیاں برائی بن جاتی ہیں اور برائیاں اچھائی، اور اس کے پاس گمراہی کا نقشہ چھا جاتا ہے۔ جو افتراق اور دشمنی کرتا ہے اس پر اسی کے راستے دشوار اور کاروبار سخت ہو جاتا ہے اور اس کے لیے چھٹکارا پانا مشکل ہو جاتا ہے۔ شک کے چار حصے ہیں۔ قوت کے مظاہرے کے لیے بحث، خواہ مخواہ کا ڈر، بلا وجہ کا اندیشہ اور غلامی (باطل)۔

جس نے فضول بحث مباحثے کو دین سمجھا اس کی شام صبح میں نہ بدلے گی یعنی وہ گمراہی سے راہِ ہدایت کی طرف نہ آئے گا۔ جو سامنے کی چیزوں سے ہول کھائے گا وہ پچھلے پیروں پلٹ جائے گا اور کوئی اقدام ہی نہ کر سکے گا۔ جو بے کار کے شبہات میں مبتلا ہو گا اسے شیطانوں کے قدم روند ڈالیں گے۔ جو دنیا و آخرت کو تباہ کرنے کے لیے خم ہو گیا وہ دونوں جگہ مرا، کہیں کا نہ رہا۔

Hazrat Ali’s quote # 38


ایمان

دین کی شریعتیں واحد ہیں۔ اس کے راستے سیدھے ہیں۔ جو اسے پا لے گا وہ حق سے جا ملے گا اور فائدے میں رہے گا، جو اسے نہ پا سکا وہ گمراہ اور پشیمان ہو گا۔

Hazrat Ali’s quote # 37


ایمان

ایمان کے معنی ہیں: دل سے پہچاننا، زبان سے ماننا، اعضا و جوارِح سے عمل کرنا۔