Hazrat Ali’s quote # 79


آدابِ جنگ

زرہ پوشوں کو آگے بڑھاؤ، بے زرہ لوگوں کو پیچھے رکھو، دانتوں کو مضبوطی سے جمائے رہو کیونکہ میدانِ جنگ میں استقامت اور ثابت قدمی سے تلواریں سروں سے دور چلی جاتی ہیں۔ نیزوں کے ساتھ پیچ و خم کے ساتھ لپٹے رہو کیونکہ اس طرح نیزہ بازی مؤثر تر ہوتی ہے۔

نظریں نیچی رکھو کیونکہ آنکھوں کا نیچا رکھنا قوتِ قلب کی زیادتی اور سکونِ دل کا موجب ہوتا ہے۔ بلند ہوتی ہوئی آوازوں کو دبائے رکھو کیونکہ متانت و سکون خوف کو دور کرتا ہے۔

اپنے پرچم کو اس کی جگہ سے حرکت نہ دو، اس کے دور کو بند نہ ہونے دو۔ اسے ہر کس و ناکس کے ہاتھ میں نہ دو سوا اُن بہادروں کے جو ہر حادثے کو روکنے کے لیے قمر بستہ رہتے ہیں اور اس کی حفاظت و نگرانی کو لازم سمجھ کر دفاع کرتے رہتے ہیں – جو لوگ سختی اور بلا برداشت کرتے ہیں اور صابر رہتے ہیں وہی اپنے جھنڈوں کے ارد گرد، دائیں بائیں اور آگے پیچھے رہ کر اس کی حفاظت کرتے ہیں۔ وہ نہ پیچھے ہٹتے ہیں کہ پرچم کو دشمن کے حوالے کر دیں، نہ یوں آگے بڑھتے ہیں کہ اس کو تنہا چھوڑ دیں۔

مرد کو لازم ہے کہ کارِ زار میں اس دشمن کا دفاع کرے جو اس کے رو برو ہو۔ اپنے بھائی کی مدد کرے اور اپنے مدِّ مقابل کو بھائی کے لیے نہ چھوڑے کیونکہ اس طرح اس کا حریف اور بھائی کا حریف دونوں مل کر اس پر ٹوٹ پڑیں گے۔

خدا کی قسم! اگر تم شمشیرِ دنیا سے بچ گئے تو شمشیرِ آخرت سے سلامت نہ رہو گے۔ تم اشرافِ عرب اور پشیتنی بزرگ ہو۔ بلا شبہ بھاگنا غضبِ الہٰی کا سبب، یقینی ذلت اور ننگ و عار کا موجب ہوتا ہے۔ بھاگنے والا اپنی زندگی میں اضافہ نہیں کر سکتا اور نہ فرار مانعِ مرگ بن سکتا ہے۔

خدا کی طرف جانے والا اس تشنہ لب کی مانند ہے جو پانی پر پہنچ جائے۔ جنت نیزے کی انی کے نیچے ہے۔

If you want to receive or deliver something related to this post, feel free to comment.

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: