Hazrat Ali’s quote # 141


چشم و دِل

انسان کے اعصاب میں ایک گوشت کا ٹکڑا لٹک رہا ہے ایک ’تعجب انگیز چیز‘ جسے ’’دل‘‘ کہتے ہیں۔ اس میں حکمت کی صلاحیت بھی ہے اور اس کے برعکس بھی (جہالت) اور اضداد کی صفات بھی ہیں۔ اگر اُمید پیدا ہوتی ہے تو لالچ ذلیل کر دیتا ہے اور اگر لالچ جوش مارتا ہے تو حرص تباہ کر دیتی ہے۔ اگر یاس چھا جاتی ہے تو غم مار ڈالتا ہے اور اگر غصہ سامنے آتا ہے تو غیظ زور کرتا ہے۔ اگر رضا اور پسندیدگی مدد کرتی ہے تو تحفظ بھلا دیتا ہے اور اگر خوف آ لیتا ہے تو پناہ کی فکر توجہ کو اپنی طرف موڑ لیتی ہے۔ اگر اطمینان حالات میں وسعت پیدا کرتا ہے تو فراموشی اسے چھین لیتی ہے۔ اگر مال فائدہ پہنچاتا ہے تو دولت مندی سرکشی دیتی ہے۔ اگر کوئی مصیبت نازل ہو تی ہے تو گھبراہٹ رسوا کر دیتی ہے۔ اگر ضرورت تنگ کرتی ہے تو بلائیں الجھا لیتی ہیں۔ اگر بھوک ستاتی ہے تو کمزوری بٹھا دیتی ہے۔ اگر پیٹ زیادہ بھر جاتا ہے تو شکم سیری سانس لینے میں تکلیف پیدا کر دیتی ہے۔ غرض کہ تفریط اسے نقصان اور افراط اسے تباہ کر دیتی ہے۔

If you want to receive or deliver something related to this post, feel free to comment.

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: